Posted on 27-May-2018

PK Legal and Associates

پاکستان میں کورٹ میرج کے بارے میں جنرل حالات کچھ ایسے کے کہ جتنے منہ اتنی باتیں اور اس کی اصل وجہ قانون میں اس کی کوئی تعریف کا نہ ہونا ہے۔
مگر ایسا ہرگز نہیں کہ کوئی اپنی پسند سے شادی کرے تو ریاست اس کے حقوق کا تحفظ نہیں کرے گی۔
اس کے بس آپ کو کسی تجربہ کار وکیل کی ضرورت ہو گی۔
پی کے لیگل اینڈ ایسوسیئٹس کی ٹیم آپ کے ہر طرح کے قانونی مسائل کے حل کے لیے ہمیشہ دستیاب ہے۔ ہم لوگ ۲۰۰۴ سے آپ جیسے بیشمار لوگوں کی خدمت کرتے آ رہے ہیں اور ابھی تک کم وبیش ۵۰۰ سے زائد کورٹ میرجز کروا چکے ہیں جس میں لوکل اور غیرملکی کے درمیان شادیاں بھی شامل ہیں۔
اس کا طریقہ کار کچھ یوں ہے کہ۔
۱۔ دونوں کا عاقل اور بالغ ہونا لازم ہے
۲۔ دونوں کے پاس شناختی کاغذات جیسے کہ شناختی کارڈ یا پاسپورٹ وغیرہ۔ اگر کسی وجہ سے فوری طور پرشناختی کارڈ یا پاسپورٹ دستیاب نہ ہوں تو فارم ب اور میٹرک کا سرٹیفکیٹ بھی استعمال ہو سکتا ہے۔
۳۔ اگر تو اسلام آ باد میں شادی کرنا ہے تو لڑکی کی چھ پاسپورٹ سائز کی تصاویر اگرلاہور میں چارجبکہ کراچی میں کر رہے تو دونوں کی چھ چھ تصاویر درکار ہوں گی۔
۴۔ شادی کی رجسٹریشن کے لیے دو مرد گواہان کا ہونا بھی لازم ہے۔
۵۔ اگر عورت یا مرد میں سے کوئی پہلے سے طلاق یافتہ،بیوہ یا رنڈوا ہو تو متعلقہ کاغذات پاس ہونا چاہئے۔